Courtesy: ڈیلی پاکستان

مغرب میں شادی کیے بغیر ایک ساتھ رہنا اور بچے پیدا کرلینا کوئی معیوب بات نہیں سمجھی جاتی لیکن اب نئی تحقیق میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ شادی کے بغیر ساتھ رہنے والے لوگوں میں شادی شدہ جوڑوں کی نسبت علیحدگی کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔

نشے سے نجات کیلئےایک دُکھی دل کی پکار “یہ دھواں کھا گیا ، میری روح کو، میرے چین کو ” گلوکار سلطان بلوچ کا سلگتا ہوا نغمہ ، دلگداز آواز، دل کو چھو لینے والی دھن روح کو تڑپا دینے والے بول – ولنگ ویز پروڈکشن

امریکہ کی یونیورسٹی آف ورجینیا کے انسٹی ٹیوٹ آف فیملی سٹڈیز کی جانب سے یہ تحقیق کی گئی ہے جس میں محققین نے 11 ممالک کے ساڑھے 16 ہزار جوڑوں سے خاندانی زندگی کے حوالے سے سروے کیا ۔ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ شادی کیے بغیر ایک ساتھ رہنے والے جوڑوں میں علیحدگی کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔ غیر شادی شدہ جوڑے بچے پیدا کربھی لیں تو پھر بھی 10 میں سے 4 جوڑے زندگی کے کسی نہ کسی حصے میں اپنے رفیق حیات کو چھوڑ دیتے ہیں ۔ تحقیق میں سامنے آیا کہ ایسے لوگ جو شادی کیے بغیر ایک ساتھ رہتے ہیں ان میں سے 39 فیصد لوگوں کو اپنا گھر اجڑنے کی فکر لاحق رہتی ہے جبکہ شادی شدہ افراد میں اس خطرے کی شرح صرف 27 فیصد ہے۔

بین الاقوامی سطح پر ہونے والے اس سروے میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ دنیا میں سب سے زیادہ برطانوی والدین کے مابین گھریلو ناچاقی پائی جاتی ہے۔ امریکہ میں 36 فیصد غیر شادی شدہ جوڑوں کی علیحدگی کا امکان ہوتا ہے جبکہ کینیڈا میں یہ شرح 34 اور فرانس میں 31 فیصد ہے۔

سروے کے دوران جب غیر شادی شدہ جوڑوں سے ان کی پہلی ترجیح پوچھی گئی تو 54 فیصد لوگوں نے اپنے جیون ساتھی کو پہلی ترجیح قرار دیا جبکہ شادی شدہ افراد میں سے 71 فیصد لوگوں نے اپنے ہمسفر کو زندگی کی سب سے قیمتی چیز قرار دیا۔ برطانیہ میں غیر شادی شدہ جوڑوں میں علیحدگی کی شرح شادی شدہ جوڑوں کے مقابلے میں 4 گنا زیادہ ہے۔

خیال رہے کہ اس تحقیق میں ان جوڑوں کو شامل کیا گیا ہے جو اپنے رشتے کے دوران ایک یا زائد بچے پیدا کرچکے ہیں۔