Courtesy: ڈیلی پاکستان

آپ بے خبر بیٹھے ہیں۔ ارے بھئی ذرا جاگئے اور دیکھئے تو سہی نئی حکومت کیسا خوبصورت تحفہ لئے آپ کی منتظر ہے، کہ جناب آئیے اور نئے پاکستان کے ثمرات میں سے اپنا حصہ وصول کر لیجئے۔ضرور پڑھیں: ایم ڈی پی ٹی وی تقرری کیس میں سپریم کورٹ کے 7.91 کروڑ ادا کرنے کے حکم پر پرویز رشید بھی میدان میں آگئے، دوٹوک اعلان کردیا

اگر آپ سوچتے ہیں کوئی کمپنی خرد برد اور کرپشن سے پاک ہے تو یہ آپ کا وہم ہے- اگر آپ سمجھتے ہیں کہ فراڈ اور ہیرا پھیری کا کچھ نہیں کیا جا سکتا تو یہ آپ کا وسوسہ ہے" ، ڈاکٹر صداقت علی بتاتے ہیں دو سنہری روئیے جو کمپنیوں میں کرپشن، خرد برد اور ہیرا پھیری کا خاتمہ کر دیتے ہیں۔

جی بالکل، اپنا ذاتی کاروبار شروع کرنے کے خواہشمند نوجوانوں کو پنجاب حکومت نے واقعی بہت بڑی خوشخبری سنادی ہے۔ یہ فیصلہ ہوگیا ہے کہ نوجوانوں کو کاروبار کے لئے آسان شرائط پر قرض فراہم کیا جائے گا، جس کے لئے کریڈٹ گارنٹی سکیم کا آغاز کیا جارہا ہے۔ اس سکیم کے تحت نوجوانوں کو 30 لاکھ روپے تک کا قرض دیا جائے گا، جبکہ نوجوان خواتین کو یہ قرض مزید آسان شرائط پر دیا جائے گا۔

حکومت پنجاب کے وزیر صنعت میاں اسلم اقبال کا کہنا ہے کہ اس سکیم کو متعارف کروانے کے لئے ابتدائی ہوم رورک مکمل کرلیا گیا ہے۔ اس مقصد کے لئے ایک کمیٹی قائم کی جائے گی جس کے سامنے قرض کے خواہاں نوجوان کاروبار شروع کرنے سے متعلق اپنا آئیڈیا پیش کریں گے۔ کمیٹی اس آئیڈیا کا جائزہ لے گی اور اس کے قابل عمل ہونے کی صورت میں قرضہ جاری کردیاجائے گا۔ کل درکار سرمائے کا 70 فیصد قرض ملے گا جبکہ 30 فیصد کا انتظام امیدوار کو خود کرنا ہوگا۔ خواتین امیدواروں کی صورت میں 80 فیصد قرض ملے گا اور 20فیصد کا انتظام انہیں خود کرنا ہوگا۔

اس قرض کی واپسی پانچ سال کے عرصے میں کرنا ہوگی جبکہ ایک سال کی رعایت بھی مل سکتی ہے۔ قرض پر واجب الادا سود کا تین فیصد انڈسٹریز ڈیپارٹمنٹ برداشت کرے گا۔ جو نوجوان پہلے سے کاروبار کررہے ہیں وہ اپنے کاروبار کو فروغ دینے کے لئے بھی قرض لے سکتے ہیں، جبکہ اس سکیم کے تحت یونیورسٹی کے طلبا و طالبات بھی قرض کے لئے درخواست دے سکتے ہیں۔