Courtesy: ڈیلی پاکستان

آئی ایم ایف نے کہاہے کہ بجلی کے بلوں کی مکمل وصول کی جائے ، بجلی کی تقسیم میں اصلاحات اور سبسڈی کو ختم کیا جائے ۔ضرور پڑھیں: ایم ڈی پی ٹی وی تقرری کیس میں سپریم کورٹ کے 7.91 کروڑ ادا کرنے کے حکم پر پرویز رشید بھی میدان میں آگئے، دوٹوک اعلان کردیا

اگر آپ سوچتے ہیں کوئی کمپنی خرد برد اور کرپشن سے پاک ہے تو یہ آپ کا وہم ہے- اگر آپ سمجھتے ہیں کہ فراڈ اور ہیرا پھیری کا کچھ نہیں کیا جا سکتا تو یہ آپ کا وسوسہ ہے" ، ڈاکٹر صداقت علی بتاتے ہیں دو سنہری روئیے جو کمپنیوں میں کرپشن، خرد برد اور ہیرا پھیری کا خاتمہ کر دیتے ہیں۔

دنیا نیوز کے مطابق آئی ایم ایف کے وفد اور پاور ڈویژن کے درمیان مذاکرات ہوئے جن میں آئی ایم ایف کے وفد کو ٹیرف ، ریکوری اور لائن لاسز پر بریفنگ دی گئی ۔ اس موقع پر آئی ایم ایف نے توانائی اصلاحات پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے ساتھ 14نکاتی اصلاحاتی پروگرام پر اتفاق ہوا تھا لیکن سابق حکومت نے 14نکاتی اصلاحاتی پروگرام پر عمل در آمد نہیں کیا ۔ وفد نے نیا اصلاحاتی ایجنڈا پیش کرتے ہوئے کہا کہ بجلی کے بلوں کی مکمل وصولی کی جائے اور بجلی کی تقسیم میں اصلاحات اور سبسڈی ختم کی جائے ۔