Courtesy: ڈیلی پاکستان

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) گھریلو اشیاء، مائیکروویو وغیرہ، کی صفائی تو کچھ وقت بعد کر لی جاتی ہے لیکن کمپیوٹر کو توزیادہ تر لوگ اس وقت تک صاف نہیں کرتے جب تک وہ چلنے سے جواب نہ دے جائے۔ اب ماہرین نے کمپیوٹر، مائیکروویو اور دیگر اشیاءکی صفائی کے متعلق انتہائی سخت ہدایات جاری کر دی ہیں۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ ”ان چیزوں کی بروقت صفائی نہ کرنا حفظان صحت کے لیے انتہائی نقصان دہ ہوتا ہے۔ اس خطرے سے بچنے کے لیے مائیکروویو ہفتے میں دو بار اور کمپیوٹر یا لیپ ٹاپ کو ہفتے میں ایک بار صاف کرنا چاہیے۔“

نشے سے نجات کیلئےایک دُکھی دل کی پکار “یہ دھواں کھا گیا ، میری روح کو، میرے چین کو ” گلوکار سلطان بلوچ کا سلگتا ہوا نغمہ ، دلگداز آواز، دل کو چھو لینے والی دھن روح کو تڑپا دینے والے بول – ولنگ ویز پروڈکشن

سائمنز کالج بوسٹن کی حفظان صحت کی ماہر پروفیسر الزبتھ سکاٹ کا کہنا تھا کہ ”مائیکروویو اور کمپیوٹر کا کی بورڈ اور ماﺅس وغیرہ جیسے حصے بیکٹیریا کا گھر ہوتے ہیں۔ مائیکروویو کی صفائی کے بعد آدھے کپ پانی میں سفید سرکہ ملا کر اسے اس میں تب تک گرم کریں جب تک اس سے بھاپ نہ اٹھنے لگے۔“ کمپیوٹر اور لیپ ٹاپ کے کی بورڈرز کے متعلق ماہرین یہ چشم کشا انکشاف کیا ہے کہ اس پر ٹوائلٹ کی سیٹ سے بھی 5گنا زیادہ بیکٹیریا ہوتے ہیں اس کے باوجود اکثر لوگ کمپیوٹر استعمال کرتے ہوئے ہی کھانا کھا رہے ہوتے ہیں۔دس فیصد لوگ ایسے ہیں جو کبھی کی بورڈ کو صاف نہیں کرتے۔ ماہرین کی ہدایت کے مطابق ہمیں ہفتے میں کم از کم ایک بار کی بورڈ اور ماﺅس وغیرہ کی جراثیم کش سپرے کے ذریعے صفائی کرنی چاہیے۔