Courtesy: جاوید چودھری ڈاٹ کام

آل پاکستان تاجر اتحاد کے صدر محمد کاشف چوہدری نے کہا ہے کہ اسلام آباد کے تا جروں کے دیرینہ مطالبے منصفا نہ قانون کرایہ داری کے بل کی منظوری کیلئے 23جنوری کو وفاقی دارالحکو مت میں غیر معینہ مدت کے لیے شٹرڈاؤن ہر تال کی جا ئے گی اور اسلام آباد کے ہزاروں تا جر پارلیمنٹ ہاوس کی طر ف احتجاجی مار چ کر یں گے،انھوں نے کہا ساڑھے 4 سال گزر گئے اسلام آباد کے تاجروں کو منصفانہ قانون کرایہ داری نہ مل سکا،حکومت وقت کے اب آخری ایام ہیں، حکو مت اپنے وعدوں پر عمل کرتے ہوئے اسلام آباد کے تاجروں کے لئے منصفانہ قانون کرایہ داری فوری نافذ کرے اور اسلام آباد میں مہنگائی کی شرح کو کنٹرول کرنے کے لئے کمرشل پراپرٹی کے کرایوں کی شرح کا تعین بھی کیا جائے۔

نشے سے نجات کیلئےایک دُکھی دل کی پکار “یہ دھواں کھا گیا ، میری روح کو، میرے چین کو ” گلوکار سلطان بلوچ کا سلگتا ہوا نغمہ ، دلگداز آواز، دل کو چھو لینے والی دھن روح کو تڑپا دینے والے بول – ولنگ ویز پروڈکشن

ان خیالات کا اظہار انھوں نے الیکٹرو نک اور پر نٹ میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کر تے ہو ئے کیا ۔ اس مو قع پر سید عمران بخاری ، چوہدری جا وید اختر اور ضیاء احمد بھی اُن کے ہمراہ تھے ۔کاشف چوہدری نے کہا قانون کرایہ داری کا بل نہ ہو نے کی وجہ سے پچھلے 20 سال سے اسلام آباد کے تاجروں کا معاشی قتل کیا جار ہا ہے ،پاکستان میں معیشت کے استحکام اور تاجروں اور عوام میں پائی جانے والی بے چینی اور عدم تحفظ،مہنگائی سے نجات کے لئے حکومت اپنے انتخانی منشور اور انتخابی وعدوں پر عمل کرے، تاجر یہ نہیں چاہتے کہ وہ احتجاج ،دھرنے اور ہڑتالوں کی طرف جائیں مگر حکومت اسے مجبور کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا تاجروں سے ٹیکس تو لیا جاتا ہے مگر ٹیکس تاجروں اور عوام الناس پر خرچ نہیں ہوتا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ بنک ٹرانزیکشن پر ودہولڈنگ ٹیکس کو ختم کیا جائے، انکم ٹیکس کے پیچیدہ نظام کو آسان بنایا جائے،ایف بی آر کے آفیسرز کے چھاپے مارنے کے اختیارات کو ختم کیا جائے اور ان ڈائریکٹ ٹیکس کے بوجھ سے عوام کی جان چھڑائی جائے۔کاشف چوہدری نے کہاپاکستان میں مالیاتی خودمختاری قائم کرنے کے لئے اخراجات کو کم کیا جائے۔ آئی ایم ایف ورلڈ بنک کی معاشی پالیسیوں سے جان چھڑائی جائے۔جتنے بھی قوانین بنائے جائیں وہ تاجرتنظیموں کی باہم مشاورت اور ان کو اعتماد میں لے کر بنائے جائیں۔