Courtesy: ڈیلی پاکستان

لاس اینجلس(نیوز ڈیسک) بادشاہوں کے زمانے تو پرانے ہو گئے لیکن ایک امریکی آرٹسٹ نے آج کے دور میں بھی بادشاہوں جیسا مزہ لینے کا طریقہ ایجاد کر دیا ہے، اگرچہ شاہی مزے لینے کے لئے آپ کی جیب میں ایک لاکھ ڈالر (تقریباً ایک کروڑ پاکستانی روپے) ضرور ہونے چاہئیں۔

اگر آپ سوچتے ہیں کوئی کمپنی خرد برد اور کرپشن سے پاک ہے تو یہ آپ کا وہم ہے- اگر آپ سمجھتے ہیں کہ فراڈ اور ہیرا پھیری کا کچھ نہیں کیا جا سکتا تو یہ آپ کا وسوسہ ہے” ، ڈاکٹر صداقت علی بتاتے ہیں دو سنہری روئیے جو کمپنیوں میں کرپشن، خرد برد اور ہیرا پھیری کا خاتمہ کر دیتے ہیں۔

میل آن لائن کے مطابق مشہور امریکی آرٹسٹ الما گور نے سونے سے بنی ٹوائلٹ سیٹ پیش کر دی ہے جسے انہوں نے تین ماہ رات دن محنت کر کے ڈیزائن کیا ہے۔ کیلیفورنیا کے ٹریڈسی شوروم میں اسے فروخت کے لئے پیش کرتے ہی دیکھنے والوں کا تانتا بندھ گیا ہے۔’اس مزارمیں جو شخص بھی داخل ہوا اسے۔۔۔‘ اہرام مصر بنانے والوں کے مزار عام عوام کے لئے کھول دئیے گئے، لیکن ہزاروں سال پہلے بنانے والوں نے ان کے اوپر کیا وارننگ لکھی؟ ایسی خوفناک بات کہ جان کر آپ ان قبروں کے قریب جانے کی بھی ہمت نہ کر پائیں گے

آرٹسٹ الماگور کا کہنا ہے کہ اگرچہ اس ٹوائلٹ کے ڈیزائن پر مہینوں کی محنت صرف ہوئی ہے اور اس کی قیمت بھی غیر معمولی حد تک زیادہ ہے لیکن اس کے باوجود یہ محض آرٹ کا نمونہ نہیں ہے بلکہ حقیقی استعمال کے لئے بنائی گئی ہے۔ اسے ایک عام ٹوائلٹ سیٹ کی طرح سیوریج کے پائپوں سے جوڑا جا سکتا ہے اور یہ اسی مقصد کےئےاستعمال ہو گی جس کے لئے ایک عام ٹوائلٹ سیٹ استعمال ہوتی ہے۔