Courtesy: ڈیلی پاکستان

11لاہور (ویب ڈیسک)پنجاب فوڈ اتھارٹی نے لاہور میں مچھلی فروشوں کی6 معروف دکانیں اور مختلف شہروں میں زائد المیعاد اجزاءاور ناقص صفائی پر مختلف اشیاءبنانے والے پروڈکشن یونٹس سیل کر دیئے ہیں۔

اگر آپ سوچتے ہیں کوئی کمپنی خرد برد اور کرپشن سے پاک ہے تو یہ آپ کا وہم ہے- اگر آپ سمجھتے ہیں کہ فراڈ اور ہیرا پھیری کا کچھ نہیں کیا جا سکتا تو یہ آپ کا وسوسہ ہے" ، ڈاکٹر صداقت علی بتاتے ہیں دو سنہری روئیے جو کمپنیوں میں کرپشن، خرد برد اور ہیرا پھیری کا خاتمہ کر دیتے ہیں۔

اگر آپ سوچتے ہیں کوئی کمپنی خرد برد اور کرپشن سے پاک ہے تو یہ آپ کا وہم ہے- اگر آپ سمجھتے ہیں کہ فراڈ اور ہیرا پھیری کا کچھ نہیں کیا جا سکتا تو یہ آپ کا وسوسہ ہے” ، ڈاکٹر صداقت علی بتاتے ہیں دو سنہری روئیے جو کمپنیوں میں کرپشن، خرد برد اور ہیرا پھیری کا خاتمہ کر دیتے ہیں۔

اے ڈی جی آپریشنز پنجاب فوڈ اتھارٹی رافع حیدر کے مطابق لاہور میں مچھلی فروشوں کی 6 معروف دکانوں پر زائد المیعاد اور استعمال شدہ گھی اور کوکنگ آئل استعمال کیا جا رہا تھا جبکہ باسی مچھلی فروخت کی جا رہی تھی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ مختلف شہروں میں زائد المیعاد اجزاءاور ناقص صفائی پر مختلف اشیاءبنانے والے11 پروڈکشن یونٹس بھی سیل کردیئے گئے۔

انہوں نے بتایا کہ ان پروڈکشن یونٹس میں نمکو، سوئیٹس، بچوں کی اشیائے خورو نوش اور فوڈ کلر تیار کیے جا رہے تھے۔اے ڈی جی آپریشنز نے مزید بتایا کہ رواں ہفتے کے دوران مجموعی طور پر 4 ہزار سےزائد مقامات کی چیکنگ کر کے 200 کے قریب فوڈ پوائنٹس کے خلاف کارروائی کی گئی۔