بیجنگ: چینی سرکاری اخبار کے مطابق، جنگ کی صورت میں اگر شمالی کوریا نے امریکا پر حملہ کیا تو چین غیر جانبدار رہے گا لیکن اگر امریکا نے پہل کرتے ہوئے شمالی کوریا پر چڑھائی کرکے وہاں حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش کی تو پھر چین اسے روکے گا۔

“میں نے تجربے سے سیکھا ہے کہ مجھے زندگی میں کسی ایکسکیوز کے پیچھے نہیں چھپنا” طٰہ صداقت Ceo ولنگ ویز “مجھے یقین ہے کہ زندگی میں آخرکار آپ وہ کر گزرتے ہیں جوآپ کرنا چاہتے ہیں”

Posted by Willing Ways on Tuesday, October 3, 2017

یہ خبر گزشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے شمالی کوریا پر حملے کی دھمکی کے جواب میں جاری کی گئی ہے۔ اپنے بیان میں ٹرمپ نے دعوی کیا تھا کہ شمالی کوریا ایسے منصوبے بنارہا ہے جن کے تحت وہ گوام پر یا بحرالکاہل میں امریکی اتحادی ممالک پر حملے کرے گا۔ اس مبینہ منصوبے کو بنیاد بناتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی کوریا پر حملے کی دھمکی دے ڈالی تھی۔

انگریزی زبان میں چین سے شائع ہونے والے سرکاری اخبار گلوبل ٹائمز نے اپنے اداریئے میں لکھا ہے کہ اب تک امریکا یا شمالی امریکا کو محاذ آرائی سے باز رکھنے میں چین کو کامیابی حاصل نہیں ہوسکی ہے۔ تاہم اس معاملے کے فریقین کو حالات کی نزاکت سمجھتے ہوئے ایسے کسی بھی اقدام سے باز رہنا چاہیے کہ جس سے خطے میں امن متاثر ہو۔
بظاہر آزاد پیرایہ اختیار کرتے ہوئے اس اخبار نے اپنے اداریئے میں لکھا ہے کہ امریکا پر شمالی کوریا کے حملے پر امریکی ردِعمل کی صورت میں چین غیر جانبدار رہے گا لیکن اگر امریکا نے شمالی کوریا پر حملے میں پہل کی تو پھر چین اس کا ’’مضبوط ہاتھوں سے‘‘ جواب دے گا۔

تاہم اداریئے میں یہ بھی واضح کیا ہے کہ فریقین (امریکا یا شمالی کوریا) میں سے کسی نے بھی خطّہ بحرالکاہل کی طے شدہ سیاسی حیثیت میں ردّ و بدل کیا تو چین اپنے مفادات کے تحفظ کےلیے کسی بھی طرح کے اقدامات کرنے کا پورا حق رکھتا ہے۔

Courtesy: ایکسپریس